جیون بھر کی آس ہے تو




جیون بھر کی آس ہے تو
جینے کا احساس ہے تو
تن سے ہے تو دور مگر
من کے پھر بھی پاس ہے تو
شاید تو ہے ایک سراب
لیکن میری پیاس ہے تو
تجھ ہی سے ہو جیسے بقاء
ایسا اک احساس ہے تو
بزم ہو یا تنہائی ہو
ہر جا دل کو راس ہے تو
عتیق الرحمٰن صفی ؔ




اپنا تبصرہ بھیجیں