کیا پوچھتے ہو، میں کیسا ہوں




کیا پوچھتے ہو، میں کیسا ہوں
اک سرد ہوا کا جھونکا ہوں
ہے میری روح میں بے چینی
میں اپنے آپ میں الجھا ہوں
ہے میرا سایہ اور کوئی !
میں اور کسی کا سایہ ہوں
تو خوش ہے اپنی دنیا میں
میں تیری یاد میں جلتا ہوں
اب لوٹ کے آ اور دیکھ بقا
اک عمر سے تنہا تنہا ہوں
بقا بلوچؔ




اپنا تبصرہ بھیجیں