تو جب مجھ سے روٹھ گئی تھی




تو جب مجھ سے روٹھ گئی تھی
ساری دنیا دیکھرہی تھی
جب بھی اندر جھانک کے دیکھا
تو اندر سے بول رہی تھی
میں جب شام کو لوٹ کے آیا
در پر اک زنجیر پڑی تھی
بقا بلوچؔ




اپنا تبصرہ بھیجیں