ہن مینوں کون پچھانے ہن میں ہو گئی نی کجھ ہور




ہن مینوں کون پچھانے ہن میں ہو گئی نی کجھ ہور
ہادی مینوں سبق پڑھایا
اوتھے غیر نہ آیا جایا
مطلق ذات جمال دکھایا

وحدت پایا نی شور
ہن مینوں کون پچھانے ہن میں ہو گئی نی کجھ ہور

اول ہو کے لا مکانی
ظاہر باطن دس دا جانی
رہیا نہ میرا نام نشانی
مٹ گیا جھگڑا شور
ہن مینوں کون پچھانے ہن میں ہو گئی نی کجھ ہور

پیار ا آپ جمال دکھا لے
مست قلندر ہون متوالے
ہنسا دے ہن دیکھ لے چالے
بلھا کانگاں دی بھل گئی ٹور
ہن مینوں کون پچھانے ہن میں ہو گئی نی کجھ ہور
بلھے شاہ ؔ




اپنا تبصرہ بھیجیں