دور سایا سا ہے کیا پھولوں میں




دور سایا سا ہے کیا پھولوں میں
چھپتی پھرتی ہے صبا پھولوں میں
چاند بھی آگیا شاخوں کے قریب
یہ نیا پھول کھلا پھولوں میں
چاند میرا ہے ستاروں سے الگ
پھول میرا ہے جدا پھولوں میں
چاندنی چھوڑ گئی تھی خوشبو
دھوپ نے رنگ بھرا پھولوں میں
رک گیا ہاتھ ترا کیوں باصر
کوئی کانٹا تو نہ تھا پھولوں میں
باصر سلطان کاظمی




اپنا تبصرہ بھیجیں