کتنا کام کریں گے




کتنا کام کریں گے
اب آرام کریں گے
تیرے دیے ہوئے دکھ
تیرے نام کریں گے
اہل درد ہی آخر
کوشیاں عام کریں گے
نوکری چھوڑ کے باصر
اپنا کام کریں گے
باصر سلطان کاظمی




اپنا تبصرہ بھیجیں