زندگی پر مری کرم کریو




زندگی پر مری کرم کریو
روشنی ختم ایک دم کریو
مجھ کو مجنوں قرار دلوا کر
نام میرا بھی محترم کر یو
ناز اس کے اٹھائیو دل پر
پیار اس سے جنم جنم کریو
لب سلیں یا زبان کٹ جاوے
سچ کو ہر حال میں رقم کریو
خون دل روشنائی کر لیجو
انگلیا ں کاٹ کر قلم کریو
چل چلاؤ ہے ٹک خبر لے لے
جان شہزاد پھر نہ غم کریو
فرحت شہزاد ؔ




اپنا تبصرہ بھیجیں