سکیج




یاد ہے اک دن
میرے میز پہ بیٹھے بیٹھے
سگریٹ کی ڈبیہ پر تم نے
چھوتے سے اک پودے کا
ایک اسکیچ بنایا تھا
اا کر دیکھو
اس پودے پر پھول آیا ہے !
گلزار ؔ




اپنا تبصرہ بھیجیں