کھلونے




منو اکثر یہی کچھ پوچھتی ہے دائی ماں ۔۔۔ ماں !
کھلونے بھی بڑے ہوتے
انہیں بھی عمر لگ جاتی ۔۔۔۔ تو کیا ہوتا ؟
گلزار ؔ




اپنا تبصرہ بھیجیں