کاش ایسا ہو کہ اب کے بے وفائی میں کروں




کاش ایسا ہو کہ اب کے بے وفائی میں کروں
وت پھر ے قریہ بہ قریہ کو بہ کو میرے لئے
میں تو لا محدود ہو جاؤں سمندر کی طرح
تو بہے دریا بہ دریا جو بہ جو میرے لئے
خالد ؔ شریف




اپنا تبصرہ بھیجیں