تم نے بھی کون ساچاہا تھا مجھے !




تم نے بھی کون سا چاہا تھا مجھے
مری باتیں بھی غلط میرے ارادے بھی غلط
بے وفائی کا یہ خود ساختہ بہتان بھی تسلیم مجھے
یہ بھی مانا کہ غم دہر جواں تھا تو غم جاں کو مری آنکھ کے آنسو نہ ملے
جب زمانوں کی یہ بے مہر ہوائیں مری سوچوں کو جلا دیتی ہین
میں سوچتا ہوں
جب غم دہر کی پلکیں تری جانب مری شدت کو گھٹا دیتی ہیں
میں سوچتا ہوں
جب کبھی اپنی جفائیں مجھے خود اپنی نگاہوں میں گرا دیتی ہین
میں سوچتا ہوں
تم نے بھی کون سا چاہا تھا مجھے!
خالد شریف




اپنا تبصرہ بھیجیں