لاہور میں




ڈاک خانے کے ٹکٹ گھر پر خریداروں کی بھیڑ
ایک چوبی طاقچے پر کچھ دواتیں، اک قلم
یہ قلم میں نے اٹھا یا اور خط لکھنے لگا
پیارے ماموں جی ! دعا کیجئے خدا رکھ لے بھرم
آج انٹر ویو ہے ! ۔۔۔ کل تک فیصلہ ہو جائے گا
دیکھیں کیا ہو ؟ مجھ کو ڈر ہے ۔۔ ۔ اتنے مین تم آگئیں !
اک ذرا تکلیف فرما کر پتہ لکھ دیجئے
میں نے تم سے وہ لفافہ لے لیا ، جھجکانہیں
بے دھڑک لکھ ڈالا میں نے کانپتے ہاتھوں کے ساتھ
مختصر ، رنگیں پتہ : گلگت میں، گوہر خاں کے نام !
شکریہ ۔۔ جی کیسا ؟ ۔۔ اک ہنستی نگہ زیر نقاب
داک میں خط ۔۔۔ تانگہ ٹمپل روڈ کو ۔۔ قصہ تمام !
مجید امجد




اپنا تبصرہ بھیجیں