بعضے تو یہ کہتے تھے ہوئی فتح لڑائی




بعضے تو یہ کہتے تھے ہوئی فتح لڑائی
بعضوں کا یہ تھا قول کہ سب کی اجل آئی
سرور نے شجاعت چہ مرداں کی ہے پائی
وہ ایک طرف ایک طرف ساری خدائی
اس شیر کا بازو جو شکستہ ہے تو کیا ہے
رک جائے گا وہ جس کا پدر دست خدا ہے
اس امر میں کیا جانیے کیا ہے اسے منظور
جو اس میں ہے قدر وہ کسی میں نہیں مقدرو
پیاسا ہے وہ عافز ہے وہ ہے بیکس و مجبور
انساں ہے پہ ہیں حکم میں جن و ملک و حور
حق اس کا ہے طالب وہ طلبگار خدا ہے
ایذا وہ اٹھاتا ہے یہ اسرار خدا ہے
میر انیس




اپنا تبصرہ بھیجیں