ہونٹو ں پہ جن کے نام تمنا سے آئے وہیں




ہونٹو ں پہ جن کے نام تمنا سے آئے وہیں
رنگیں قبا یہ گلشن زہرا سے آئے ہیں
منزل بنے کہیں، کہیں منزل نما بنے
اک نقش پا کے پھول ہیں صحرا سے آئے ہیں
ہیں آرزوئے کون و مکاں فخر انس و جاں
میدان کربلا میں جو تنہا سے آئے ہیں
یہ شان ہے انہی کی کہ آل رسول ﷺ ہیں
تشنہ دہن جو آئے ہیں دریا سے آئے ہیں
ادا جعفری




اپنا تبصرہ بھیجیں