دیپ جلایا پانی میں




دیپ جلایا پانی میں
پھول کھلایا پانی میں
سورج اور پرندوں کا
منظر آیا پانی میں
ننھی منی چڑیوں نے
شور مچایا پانی میں
اس نے اپنے جوڑے کا
پھول گرایا پانی میں
تاروں کے پیچھے پیچھے
چندا آیا پانی میں
بارش اور ہواؤں نے
شور مچایا پانی میں
جلتے بجتے تاروں نے
شہر بسایا پانی میں
پیڑوں اور پرندوں کا
دیکھا سایہ پانی میں
گورے گورے پیروں کا
عکس ملایا پانی میں
افضال فردوس




اپنا تبصرہ بھیجیں