جو تیرے میرے زوال کا تھا




جو تیرے میرے زوال کا تھا
وہ لمحہ کتنے کمال کا تھا
سمے کی جب نبض رک گئی تھی
وہ ایک پل کتنے سال کا تھا ؟
بس ایک لمحے میں کٹ گیا ہے
وہ ربط جو ماہ و سال کا تھا
جو طاق زنداں میں بجھ گیا ہے
وہ اک دیا بھی کمال کا تھا
احمد فرید




اپنا تبصرہ بھیجیں