ساون بھادوں نیناں میرے




ساون بھادوں نیناں میرے
تم بن برسیں شام سویرے
جب سے تم پردیس سدھارے
روٹھ گئے نظروں سے نظارے
سونے ہو گئے پیار بسیرے
ساون بھادوں نیناں میرے
سونی راہیں تکتے تکتے
کیسے کیسے موسم گزرے
گزرے ہیں سجنا ں بن تیرے
ساون بھادوں نیناں میرے
دل مین پیار کا دیپ جلا کر
روشنیوں کی سیج سجا کر
میں نے پائے گھور اندھیرے
ساون بھادوں نیناں میرے
احمد راہیؔ




اپنا تبصرہ بھیجیں