نہ یہ عالی جناب اٹھے، نہ وہ عالی مقام آئے




نہ یہ عالی جناب اٹھے، نہ وہ عالی مقام آئے
جب آئی آنچ صحرا پر تو دیوانے ہی کام آئے
لہو کی چند بوندیں میں نے بکھرائی ہیں راہوں میں
نہ جانے کس شگوفے بہاروں کا سلام آئے
آل احمد سرور ؔ




اپنا تبصرہ بھیجیں