میں نے ہی کیا نکالی تھی یہ رہگور کبھی




میں نے ہی کیا نکالی تھی یہ رہگور کبھی
تکتی ہے رہگور مجھے اور رہگور کو میں
دنیا بڑی ہے اس کے مسائل بڑے بڑے
اس مخمصے میں بھول گیا اپنے گھر کو میں
آل احمد سرور ؔ




اپنا تبصرہ بھیجیں